کیا عمران خان کی تبدیلی کینیڈا نےکھو لی؟

کیا عمران خان کی تبدیلی کینیڈا نےکھو لی؟


تبدیلی کے بغیر ترقی نا ممکن ہے، جو لوگ اپنی سوچ نہی بدل سکتے وہ تبدیلی نہی لا سکتے۔ آج کل پاکستان میں گلی گلی کوچہ کوچہ تبدیلی تبدیلی کا نعرہ لگ رہا ہے، اور اس تبدیلی کے سب سے بڑے دعوہ دار عمران خان صا حب ہے۔ عمران خان کابلِ ستائش اس وجہ سے ہے کیوں کہ وہ پاکستان کے پہلے لیڈر ہیں جو تبدیلی کا نعرہ لے کر نکلےاورعوام کو اس تبدیلی کے جادو میں قابو کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ لیکن افسوس اس بات کا ہے کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والےاور اس نعرہ کی مخالفت کرنے والے دونوں ہی اس کے مطلب سے واقف نہیں۔


حکومتی جماعت ن لیگ اس تبدیلی کا مطلب الیکشن ہارنا اور پی ٹی آئ اس تبدیلی کا مطلب ۲۰۱۳ کے الیکشن کا جیتنا ہی سمجھتی رہی ہے۔ الیکشن کا نتیجہ آیا توپرانا نظام جیت گایا اور تبیدیلی ہار گیئ۔ البتہ تبدیلی خیبرپختونخہ میں ضرور آ گئ پر یہ تبدیلی صرف گورمنٹ کا بدل جانا ہی ثابت ہو سکی،غریب کی زندگی میں رتی بر نہ فرق پڑا۔


اب بات کرتے ہیں کینیڈا کی جہاں پاکستان کی طرح تبدیلی کا نعرہ لگا اور نعرہ لگانے والا لیڈر جسٹن ٹریڈو تھا، جو کے الیکشن جیتنے کے بعد فوراً اپنی عوام سے کیئے ہوئے وعدوں کو پورا کرنے کے لیے سرگرم عمل ہو گیا کیونکہ جسٹن تبدیلی کا اصل مطلب جانتا تھا۔ پیریس حملوں کے باوجود ۲۵۰۰۰ شامی مہاجرین کو کینیڈا میں پناہ دینے کا وعدہ پورا کیا، اسی طرح امریکہ کے دبائو کے باوجود عراق اور شام سے اپنی فوجیں واپس بلا کر اپنا دوسرا وعدہ پورا کیا۔ مسلمان عورتوں کا حجاب لینےکی کھلی آزادی دے کراپنا تیسرا وعدہ پورا کیا اوراب اپنے باقی وعدوں کی تکمیل کے لیے سرگرم عمل ہے۔


اب مقابلہ کریں خان صاحب تبدیلی کا ٹروڈو سے ۔ ٹروڈوبغیر کسی مذہبی اور ثقافتی تفرقہ کے تمام شہریوں کو ساتھ لے کرچل رہا ہے، جبکہ خان صاحب لوگوں کو مسلمان اور کفر کے فتوے دینے میں مصروف ہے۔ ٹروڈو کی نئی کابینہ میں تمام اقلیتوں کی نمائندگی ہے جبکہ خان صاحب نے اقتصادیات کے مایاناز پروفیسرکواحمدی جماعت سے وابستگی کی وجہ سے ناصرف رکھنے سے انکارکیا بلکہ میڈیا میں آکراحمدیوں کے خلاف فتوے بھی دئے۔


کاش ہمارے ملک پاکستان کو بھی جسٹن ٹریڈو جیسا مخلص لیڈ ر مل جائے جو پاکستانی قوم کی تکدیر بدل ڈالے۔

Comments

comments

Leave a Reply

5 thoughts on “کیا عمران خان کی تبدیلی کینیڈا نےکھو لی؟

  1. میں تو سمجھتا ہوں اس ملک کا سب سے بڑا سیاستدان دراصل یہ مولوی ہے جسے مذہب کا صرف اتنا ہی پتہ ہے کہ اس کے درپردہ دنیا پر پنا لیڈر ہونا ثابت کیا جائے وہ بیٹھتا تو مسجد میں ہے لیکن اس کا دماغ دنیا اور حکومت کے معاملات میں گھوم رہا ہوتا ہے اسی لیے وہ سب سے پہلے ہی ان امور پر اپنی رائے نہ صرف دیتا ہے بلکہ اس پر مظبوطی سے ڈٹا رہتا ہے جس کے ہونے سے اس کی ذات کو ذرا سا بھی نقصان کا اندیشہ ہو ۔لہذا جب اس نے عمران خاں کی پارٹی آسمان کی بلندیوں کو چھوتی نظر آئی تو مسجد سے نکل کر بھاگتے ہوئے عمران کے پاس پہنچ گئے اور عمران جو کہ سب شہری برابر کا نعرہ ہی لگا کر بلندیوں کو چھوتا دیکھ رہا تھا مولوی کے آگے اسی طرح جس بھٹو اور دیگر لیڈر مار کھاچکے تھے ایک چھوٹے سے مہرے کی طرح پِٹ گیا تب سے ہی س کی پارٹی بھی دوسرے نمبر سے آخری پر آگئی اور یوں مولوی کی سیاست پاکستان بننے سے اب تک کی طرح جیت گئی
    Reply
  2. ہم سمجھتے تھے کہ یہ شخص واقعتاً ایک تبدیلی لائے گا مگر جب اس نے ایک تقریر کے دوران اعلان کیا کہ جو پاکستانی اکونومسٹ ایک امریکن یونیورسٹی میں پڑھاتا ھے اور دنیا کا بہترین اکونومسٹ ھے اس کو اپنا وزیرِ خزانہ بنائے گا.
    مگر جب اس کو بتایا گیا کہ وہ اکونومسٹ تو ایک احمدی ھے اس پر عمران خان نے پنتیرا بدلا اور احمدی مسلمانوں کو کافر کہا اور مولویوں سے گھٹ جوڑ کرنے لگا. بجائے اس کے کہ ایک مثال بنے اور قائدِ اعظم کے فرمان کو سامنے رکھے “پاکستان میں سب پاکستانی ہیں اور سٹیٹ کو کسی کے مذہب میں دخل اندازی کی اجازت نہیں ھوگی”.
    تب سے یہ عمران خان ملاں کے ہاتھوں میں کھیل رھا ھے. اس کو کینیڈا کے جسٹن ٹروڈو وزیر اعظم سے سبق سیکھنا ھو گا. اگر یہ اس وطن کو انصاف کی آنکھوں سے دیکھے گا تو ہی کوئ تبدیلی آ سکتی ھے. پاکستان میں ہر کوئ محض کرسی کے پیچھے مرتا ھے.
    Reply
  3. ہم سمجھتے تھے کہ یہ شخص واقعتاً ایک تبدیلی لائے گا مگر جب اس نے ایک تقریر کے دوران اعلان کیا کہ جو پاکستانی اکونومسٹ ایک امریکن یونیورسٹی میں پڑھاتا ھے اور دنیا کا بہترین اکونومسٹ ھے اس کدو اپنا وزیرِ خزانہ بنائے گا.
    مگر جب اس کو بتایا گیا کہ وہ اکونومسٹ تو ایک احمدی ھے اس پر عمران خان نے پنتیرا بدلا اور احمدی مسلمانوں کو کافر کہا اور مولویوں سے گھٹ جوڑ کرنے لگا. بجائے اس کے کہ ایک مثال بنے اور قائدِ اعظم کے فرمان کو سامنے رکھے “پاکستان میں سب پاکستانی ہیں اور سٹیٹ کو کسی کے مذہب میں دخل اندازی کی اجازت نہیں ھوگی”.
    تب سے یہ عمران خان ملاں کے ہاتھوں میں کھیل رھا ھے. اس کو کینیڈا کے جسٹن ٹروڈو وزیر اعظم سے سبق سیکھنا ھو گا. اگر یہ اس وطن کو انصاف کی آنکھوں سے دیکھے گا تو ہی کوئ تبدیلی آ سکتی ھے. پاکستان میں ہر کوئ محض کرسی کے پیچھے مرتا ھے.
    Reply
  4. The change of hearts among people of Pakistan will bring the real change.The change will come when the humanity will be first Priority in Pakistan.The Prime minister Of Canada Is Just and True in his election campaign.

    Reply